Home / علامہ اقبال شاعری / ضرب کلیم / ادبیات فنون لطیفہ

ادبیات فنون لطیفہ

ادبیات فنون لطیفہ Archives – Urdu Poetry Library

موسيقی

Wo Nagma Sardi Khoon Gazal Sira Ki Daleel

وہ نغمہ سردي خون غزل سرا کي دليل کہ جس کو سن کے ترا چہرہ تاب ناک نہيں نوا کو کرتا ہے موج نفس سے زہر آلود وہ نے نواز کہ جس کا ضمير پاک نہيں پھرا ميں مشرق و مغرب کے لالہ زاروں ميں کسي چمن ميں گريبان لالہ …

Read More »

عالم نو

Zinda Dil Say Nhi Poosheeda Zameer Taqdeer

زندہ دل سے نہيں پوشيدہ ضمير تقدير خواب ميں ديکھتا ہے عالم نو کی تصوير اور جب بانگ اذاں کرتي ہے بيدار اسے کرتا ہے خواب ميں ديکھي ہوئي دنيا تعمير بدن اس تازہ جہاں کا ہے اسي کي کف خاک روح اس تازہ جہاں کي ہے اسي کي تکبير

Read More »

مرد بزرگ

Fart Bhi Ameeq, Iski Muhabbat Bhe Ameeqaas Ki Noon

فرت بھي عميق ، اس کي محبت بھي عميقاس کي ن قہر بھي اس کا ہے اللہ کے بندوں پہ شفيق پرورش پاتا ہے تقليد کي تاريکي ميں ہے مگر اس کي طبيعت کا تقاضا تخليق انجمن ميں بھي ميسر رہي خلوت اس کو شمع محفل کي طرح سب سے …

Read More »

ہنروران ہند

Ishaq o Masti Ka Janaza Hay Takhyyul Inka

عشق و مستي کا جنازہ ہے تخيل ان کا ان کے انديشہ تاريک ميں قوموں کے مزار موت کي نقش گري ان کے صنم خانوں ميں زندگي سے ہنر ان برہمنوں کا بيزار چشم آدم سے چھپاتے ہيں مقامات بلند کرتے ہيں روح کو خوابيدہ ، بدن کو بيدار ہند …

Read More »

شعر عجم

Hay Sheer Ajam Gircha Tarb Naak o Dil Aawaiz

ہے شعر عجم گرچہ طرب ناک و دل آويز اس شعر سے ہوتي نہيں شمشير خودي تيز افسردہ اگر اس کي نوا سے ہو گلستاں بہتر ہے کہ خاموش رہے مرغ سحر خيز وہ ضرب اگر کوہ شکن بھي ہو تو کيا ہے جس سے متزلزل نہ ہوئي دولت پرويز …

Read More »

شاعر

Mashriq kay Neesta May Hay Muhtaaj Nafes Nay

مشرق کے نيستاں ميں ہے محتاج نفس نے شاعر ! ترے سينے ميں نفس ہے کہ نہيں ہے تاثير غلامي سے خودي جس کي ہوئي نرم اچھي نہيں اس قوم کے حق ميں عجمي لے شيشے کي صراحي ہو کہ مٹي کا سبو ہو شمشير کي مانند ہو تيزي ميں …

Read More »

سرود حرام

Na Mery Ziker Main Hay Sofiyun Ka Sooz e Saroor

نہ ميرے ذکر ميں ہے صوفيوں کا سوز و سرور نہ ميرا فکر ہے پيمانہ ثواب و عذاب خدا کرے کہ اسے اتفاق ہو مجھ سے فقيہ شہر کہ ہے محرم حديث و کتاب اگر نوا ميں ہے پوشيدہ موت کا پيغام حرام ميري نگاہوں ميں ناے و چنگ و …

Read More »

مصور

Kis Darja Yahan Aam Hoi Marg e Takkhyul

کس درجہ يہاں عام ہوئي مرگ تخيل ہندي بھي فرنگي کا مقلد ، عجمي بھي مجھ کو تو يہي غم ہے کہ اس دور کے بہزاد کھو بيٹھے ہيں مشرق کا سرور ازلي بھي معلوم ہيں اے مرد ہنر تيرے کمالات صنعت تجھے آتي ہے پراني بھي ، نئي بھي …

Read More »

جلال و جمال

Mery Leay Hay Faqt Zoor Haiydri Kaafi

مرے ليے ہے فقط زور حيدري کافي ترے نصيب فلاطوں کي تيزي ادراک مري نظر ميں يہي ہے جمال و زيبائي کہ سر بسجدہ ہيں قوت کے سامنے افلاک نہ ہو جلال تو حسن و جمال بے تاثير نرا نفس ہے اگر نغمہ ہو نہ آتش ناک مجھے سزا کے …

Read More »

جدت

Dekhay To Zamanay Ko Agr Apni Nazer Say

ديکھے تو زمانے کو اگر اپني نظر سے افلاک منور ہوں ترے نور سحر سے خورشيد کرے کسب ضيا تيرے شرر سے ظاہر تري تقدير ہو سيمائے قمر سے دريا متلاطم ہوں تري موج گہر سے شرمندہ ہو فطرت ترے اعجاز ہنر سے اغيار کے افکار و تخيل کي گدائي …

Read More »

رومی

Galt Nagr Hay Tere Chasm Neem Baaz Ab Tak

غلط نگر ہے تري چشم نيم باز اب تک ترا وجود ترے واسطے ہے راز اب تک ترا نياز نہيں آشنائے ناز اب تک کہ ہے قيام سے خالي تري نماز اب تک گسستہ تار ہے تيري خودي کا ساز اب تک کہ تو ہے نغمہ رومي سے بے نياز …

Read More »

خاقانی

Wo Sahib Tuhfa e Alaaqaiyn, Arbab Nazer Ka Qurrah Ul Aain

وہ صاحب ‘تحفہ العراقين ارباب نظر کا قرہ العين ہے پردہ شگاف اس کا ادراک پردے ہيں تمام چاک در چاک خاموش ہے عالم معاني ‘کہتا نہيں حرف ‘لن تراني پوچھ اس سے يہ خاک داں ہے کيا چيز ہنگامہ اين و آں ہے کيا چيز وہ محرم عالم مکافات …

Read More »

صبح چمن

Shayd To Samjhti The Watan Door Hay Mera

پھول شايد تو سمجھتي تھي وطن دور ہے ميرا اے قاصد افلاک! نہيں ، دور نہيں ہے شبنم ہوتا ہے مگر محنت پرواز سے روشن يہ نکتہ کہ گردوں سے زميں دور نہيں ہے صبح مانند سحر صحن گلستاں ميں قدم رکھ آئے تہ پا گوہر شبنم تو نہ ٹوٹے …

Read More »

اہرام مصر

Dehshat Jigr Taab Ki Khamosh Fiza May

س دشت جگر تاب کي خاموش فضا ميں فطرت نے فقط ريت کے ٹيلے کيے تعمير اہرام کي عظمت سے نگوں سار ہيں افلاک کس ہاتھ نے کھينچي ابدےت کي يہ تصوير فطرت کي غلامي سے کر آزاد ہنر کو صياد ہيں مردان ہنر مند کہ نخچير

Read More »

نسيم و شبنم

Anjum Ki Fiza Tak Na Hoi Mere Rasai

نسيم انجم کي فضا تک نہ ہوئي ميري رسائي کرتي رہي ميں پيرہن لالہ و گل چاک مجبور ہوئي جاتي ہوں ميں ترک وطن پر بے ذوق ہيں بلبل کي نوا ہائے طرب ناک دونوں سے کيا ہے تجھے تقدير نے محرم خاک چمن اچھي کہ سرا پردہ افلاک! شبنم …

Read More »

سرود

Aaya Khan Say Naala Nay Main Sarwad Meh

آيا کہاں سے نالہ نے ميں سرود مے اصل اس کي نے نواز کا دل ہے کہ چوب نے دل کيا ہے ، اس کي مستي و قوت کہاں سے ہے کيوں اس کي اک نگاہ الٹتي ہے تخت کے کيوں اس کي زندگي سے ہے اقوام ميں حيات کيوں …

Read More »

وجود

Ay Kh Hay Zeer e Faleq Misal Shareer Tere Namood

اے کہ ہے زير فلک مثل شرر تيري نمود کون سمجھائے تجھے کيا ہيں مقامات وجود گر ہنر ميں نہيں تعمير خودي کا جوہر وائے صورت گري و شاعري و ناے و سرود مکتب و مے کدہ جز درس نبودن ندہند بودن آموز کہ ہم باشي و ہم خواہي بود

Read More »

غزل

Darya May Moti, Ay Mooj e Bybaak

دريا ميں موتي ، اے موج بے باک ساحل کي سوغات ! خاروخس و خاک ميرے شرر ميں بجلي کے جوہر ليکن نيستاں تيرا ہے نم ناک تيرا زمانہ ، تاثير تيري ناداں ! نہيں يہ تاثير افلاک ايسا جنوں بھي ديکھا ہے ميں نے جس نے سيے ہيں تقدير …

Read More »

نگاہ شوق

Ye Kaaiynat Chupati Nahi Wajood Apna

يہ کائنات چھپاتي نہيں ضمير اپنا کہ ذرے ذرے ميں ہے ذوق آشکارائي کچھ اور ہي نظر آتا ہے کاروبار جہاں نگاہ شوق اگر ہو شريک بينائي اسي نگاہ سے محکوم قوم کے فرزند ہوئے جہاں ميں سزاوار کار فرمائي اسي نگاہ ميں ہے قاہري و جباري اسي نگاہ ميں …

Read More »

اميد

Muqabla To Zamany Ka Khoob Kerta Hun

مقابلہ تو زمانے کا خوب کرتا ہوں اگرچہ ميں نہ سپاہي ہوں نے امير جنود مجھے خبر نہيں يہ شاعري ہے يا کچھ اور عطا ہوا ہے مجھے ذکر و فکر و جذب و سرود جبين بندہ حق ميں نمود ہے جس کي اسي جلال سے لبريز ہے ضمير وجود …

Read More »

شعاع اميد

Soorj Nay Dia Apni Shooaun Ko Ye Peegaam

(1) سورج نے ديا اپني شعاعوں کو يہ پيغام دنيا ہے عجب چيز ، کبھي صبح کبھي شام مدت سے تم آوارہ ہو پہنائے فضا ميں بڑھتي ہي چلي جاتي ہے بے مہري ايام نے ريت کے ذروں پہ چمکنے ميں ہے راحت نے مثل صبا طوف گل و لالہ …

Read More »

تياتر

Tere Khudi Say Hay Roshan Tera Hareem Wajood

تري خودي سے ہے روشن ترا حريم وجود حيات کيا ہے ، اسي کا سرور و سوز و ثبات بلند تر مہ و پرويں سے ہے اسي کا مقام اسي کے نور سے پيدا ہيں تيرے ذات و صفات حريم تيرا ، خودي غير کي ! معاذاللہ دوبارہ زندہ نہ …

Read More »

مسجد قوت الاسلام

Hay Mery Seena e Bynoor May Ab Kia Baqi

ہے مرے سينہ بے نور ميں اب کيا باقي ‘لاالہ’ مردہ و افسردہ و بے ذوق نمود چشم فطرت بھي نہ پہچان سکے گي مجھ کو کہ ايازي سے دگرگوں ہے مقام محمود کيوں مسلماں نہ خجل ہو تري سنگيني سے کہ غلامي سے ہوا مثل زجاج اس کا وجود …

Read More »

نگاہ

Bahaar o Qafla Lala Haay Sehraai

بہار و قافلہ لالہ ہائے صحرائي شباب و مستي و ذوق و سرود و رعنائي! اندھيري رات ميں يہ چشمکيں ستاروں کي يہ بحر ، يہ فلک نيلگوں کي پہنائي! سفر عروس قمر کا عماري شب ميں طلوع مہر و سکوت سپہر مينائي نگاہ ہو تو بہائے نظارہ کچھ بھي …

Read More »

جنوں

Zjjaj Ger Ki Dukaan Shairi Wa Malaii

زجاج گر کي دکاں شاعري و ملائي ستم ہے ، خوار پھرے دشت و در ميں ديوانہ کسے خبر کہ جنوں ميں کمال اور بھي ہيں کريں اگر اسے کوہ و کمر سے بيگانہ ہجوم مدرسہ بھي سازگار ہے اس کو کہ اس کے واسطے لازم نہيں ہے ويرانہ

Read More »

تخليق

Jahan Taza Ki Afkaar Taza Say Hay Namood

جہان تازہ کي افکار تازہ سے ہے نمود کہ سنگ و خشت سے ہوتے نہيں جہاں پيدا خودي ميں ڈوبنے والوں کے عزم و ہمت نے اس آبجو سے کيے بحر بے کراں پيدا وہي زمانے کي گردش پہ غالب آتا ہے جو ہر نفس سے کرے عمر جاوداں پيدا …

Read More »

دين و ہنر

Sarood o Sheer Wa Siyast, Kitab o Deen Wa Huner

سرود و شعر و سياست ، کتاب و دين و ہنر گہر ہيں ان کي گرہ ميں تمام يک دانہ ضمير بندہ خاکي سے ہے نمود ان کي بلند تر ہے ستاروں سے ان کا کاشانہ اگر خودي کي حفاظت کريں تو عين حيات نہ کر سکيں تو سراپا فسون …

Read More »