Bahaar o Qafla Lala Haay Sehraai

نگاہ

بہار و قافلہ لالہ ہائے صحرائي
شباب و مستي و ذوق و سرود و رعنائي!
اندھيري رات ميں يہ چشمکيں ستاروں کي
يہ بحر ، يہ فلک نيلگوں کي پہنائي!
سفر عروس قمر کا عماري شب ميں
طلوع مہر و سکوت سپہر مينائي

نگاہ ہو تو بہائے نظارہ کچھ بھي نہيں
کہ بيچتي نہيں فطرت جمال و زيبائي
———————-

رياض منزل(دولت کدئہ سرراس مسعود ) بھوپال ميں لکھے گئے

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے