Home / علامہ اقبال شاعری / ارمغان حجاز / ارمغان حجاز – رباعیات

ارمغان حجاز – رباعیات

ارمغان حجاز – رباعیات Archives – Urdu Poetry Library

کبھي دريا سے مثل موج ابھر کر

(Armaghan-e-Hijaz-21) Kabhi Darya Se Misel-e-Mouj Ubhar Kar (کبھی دریا سے مثل موج ابھر کر) Sometimes by rising from the ocean like a wave کبھی دريا سے مثل موج ابھر کر کبھی دريا کے سينے ميں اتر کر کبھی دريا کے ساحل سے گزر کر مقام اپنی خودی کا فاش تر …

Read More »

خرد ديکھے اگر دل کی نگہ سے

Khird Dekhe Agar Dil Ki Nigah Se

(Armaghan-e-Hijaz-20) Khirad Dekhe Agar Dil Ki Nigah Se If with the heart’s eye the intellect would see aright خرد ديکھے اگر دل کی نگہ سے جہاں روشن ہے نور ‘لا الہ’ سے فقط اک گردش شام و سحر ہے اگر ديکھيں فروغ مہر و مہ سے ———— Transliteration Khird Dekhe Agar Dil …

Read More »

ترے دريا ميں طوفاں کيوں نہيں ہے

Tere Darya Mein Toofan Kyun Nahin Hai

(Armaghan-e-Hijaz-19) Tere Darya Mein Toofan Kyun Nahin Hai ?Why is there no storm in your sea ترے دريا ميں طوفاں کيوں نہيں ہے خودی تيری مسلماں کيوں نہيں ہے عبث ہے شکوئہ تقدير يزداں تو خود تقدير يزداں کيوں نہيں ہے? ————— Transliteration Tere Darya Mein Toofan Kyun Nahin Hai …

Read More »

نہ کر ذکر فراق و آشنائی

Na Kar Zikr-E-Firaaq-O-Ashnaai

(Armaghan-e-Hijaz-18) Na Kar Zikr -e-Firaq-o-Ashnayi ( نہ کر ذکر و فراق آشنائی) Of love and losing what words need be said? نہ کر ذکر فراق و آشنائی کہ اصل زندگی ہے خود نمائی نہ دريا کا زياں ہے، نے گہر کا دل دريا سے گوہر کی جدائی ————– Transliteration Na …

Read More »

تميز خار و گل سے آشکارا

Tameez Khaar wa Gull Say Aashikara

(Armaghan-e-Hijaz-17) Tameez-e-Khar-o-Gul Se Ashakara Is apparent from discrimination between flowers and thorns   تميز خار و گل سے آشکارا نسيم صبح کی روشن ضميری حفاظت پھول کی ممکن نہيں ہے اگر کانٹے ميں ہو خوئے حريری ———– Transliteration Tameez-E-Khaar-O-Gul Se Ashakara Naseem-E-Suba Ki Roshan Zameeri The clairvoyance of the zephyr Is apparent from its discrimination between flowers and thorns! Hifazat Phool Ki …

Read More »

حديث بندئہ مومن دل آويز

Hadees-E-Banda’ay Momin Dil Awaiz

(Armaghan-e-Hijaz-16) Hadees-e-Banda’e Momin Dil Awaiz The talk of Muslim is interesting حديث بندئہ مومن دل آويز جگر پر خوں، نفس روشن، نگہ تيز ميسر ہو کسے ديدار اس کا کہ ہے وہ رونق محفل کم آميز ————– Transliteration Hadees-E-Banda’ay Momin Dil Awaiz Jigar Pur Khoon, Nafs Roshan, Nigah Taiz The talk of Muslim is interesting, His heart warm, breath light and gaze arresting. Muyassar Ho Kise Didar …

Read More »

کہن ہنگامہ ہائے آرزو سرد

Kihan Hangama Ha’ay Arzoo e Sard

(Armaghan-e-Hijaz-15) Kuhan Hangama Haye Arzoo Sard (کہن ہنگامہ ہاے آرزو سرد) The old flame of desires has grown cold کہن ہنگامہ ہائے آرزو سرد کہ ہے مرد مسلماں کا لہو سرد بتوں کو ميری لادينی مبارک کہ ہے آج آتش ‘اللہ ھو، سرد ———— Transliteration Kuhan Hangama Ha’ay Arzoo Sard Kh Hai Mard-e-Musalman Ka Lahoo Sard The old flame of desires has grown cold …

Read More »

کہا اقبال نے شيخ حرم سے

Kaha Iqbal Ne Sheikh-E-Haram Se

(Armaghan-e-Hijaz-14) Kaha Iqbal Ne Sheikh-e-Haram Se (کہا اقبال نے شیخ حرم سے) Iqbal said to the Shaykh of the Ka’bah کہا اقبال نے شيخ حرم سے تہ محراب مسجد سو گيا کون ندا مسجد کی ديواروں سے آئي فرنگی بت کدے ميں کھو گيا کون؟ ————- Transliteration Kaha Iqbal Ne …

Read More »

خرد کی تنگ دامانی سے فرياد

Khirad Ki Tang Damaani Se Faryad

(Armaghan-e-Hijaz-13) Khirad Ki Tang Daamani Se Faryad (خرد کی تنگ دامانی سے فریاد) Rescue me please from wisdom’s narrowness خرد کی تنگ دامانی سے فرياد تجلی کی فراوانی سے فرياد گوارا ہے اسے نظارئہ غير نگہ کی نا مسلمانی سے فرياد ————– Transliteration Khirad Ki Tang Damaani Se Faryad Tajali Ki Farawani Se Faryad Rescue me please from wisdom’s narrowness …

Read More »

غريبی ميں ہوں محسود اميری

Ghareebi Mein Hon Mehsood-E-Ameeri

(Armaghan-e-Hijaz-12) Ghareebi Mein Hun Mehsud-e-Ameeri (غریبی میں ہوں محسود امیری) My poor estate makes proud men covetous غريبی ميں ہوں محسود اميری کہ غيرت مند ہے ميری فقيری حذر اس فقر و درويشی سے، جس نے مسلماں کو سکھا دی سر بزيری ———– Transliteration Ghareebi Mein Hon Mehsood-E-Ameeri Ke Ghairatmand …

Read More »

دگرگوںعالم شام و سحر کر

Digargoon Alam-E-Shaam-O-Sahar Kar

(Armaghan-e-Hijaz-11) Digargoon Alam-e-Sham-o-Sahar Kar (دگرگوں عالم شام و سحر کر) Upset this world of morn and eve دگرگوں عالم شام و سحر کر جہان خشک و تر زير و زبر کر رہے تيری خدائی داغ سے پاک مرے بے ذوق سجدوں سے حذر کر ————– Transliteration Digargoon Alam-E-Shaam-O-Sahar Kar Jahan-E-Khusk-O-Tar …

Read More »

فراغت دے اسے کار جہاں سے

Faraghat De Usse Kar-E-Jahan Se

(Armaghan-e-Hijaz-10) Faraghat De Usse Kaar-e-Jahan Se (فراغت دے اس کار جہاں سے) Set him free of this world’s affairs فراغت دے اسے کار جہاں سے کہ چھوٹے ہر نفس کے امتحاں سے ہوا پيری سے شيطاں کہنہ انديش گناہ تازہ تر لائے کہاں سے ————- Transliteration Faraghat De Usse Kar-E-Jahan …

Read More »

مري شاخ امل کا ہے ثمر کيا

Meri Shakh-E-Amal Ka Hai Samar Kya

(Armaghan-e-Hijaz-09) Rubaiyat – Meri Shakh-e-Amal Ka hai Samar Kya (رباعیات: میری شاخ امل کا ہے ثمر کیا) What fruit will the bough of my hope bear مري شاخ امل کا ہے ثمر کيا تري تقدير کي مجھ کو خبر کيا کلي گل کي ہے محتاج کشود آج نسيم صبح فردا پر نظر کيا ———— Transliteration Rubaiyat QUATRAINS Meri …

Read More »