Wo Mis Booli Irada Khud'Kashi Ka Jab Kia Main Nay

وہ مس بولي ارادہ خودکشي کا جب کيا ميں نے

وہ مس بولي ارادہ خودکشي کا جب کيا ميں نے
مہذب ہے تو اے عاشق! قدم باہر نہ دھر حد سے

نہ جرات ہے ، نہ خنجر ہے تو قصد خودکشي کيسا
يہ مانا درد ناکامي گيا تيرا گزر حد سے

کہا ميں نے کہ اے جاں جہاں کچھ نقد دلوا دو
کرائے پر منگالوں گا کوئي افغان سرحد سے

——————

Transliteration

Woh Miss Boli Irada Khudkushi Ka Jab Kiya Main Ne
Muhazzib Hai Tu Ae Ashiq! Qadam Bahir Na Dhar Had Se

Na Juraat Hai, Na Khanjar Hai To Qasad-e-Khudkushi Kaisa
Ye Mana Dard-e-Nakami Gya Tera Guzr Had Se

Kaha Main Ke Ae Jaan-e-Jahan Kuch Naqad Dilwa Do
Karaye Par Mangwa Loon Ga Koi Afghan Sarhad Se

——————-

As I tried to commit suicide the Miss exclaimed
“O lover! If you are civilized do not transgress the limits

Without courage or dagger suicide’s intention is strange
Even granting your pain of failure has exceeded the limits”

I said, “O dear, give me some cash
I shall hire some Afghan from the Frontier Province”

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے