کھلے جاتے ہيں اسرار نہانی

کھلے جاتے ہيں اسرار نہانی
گيا دور حديث ‘لن ترانی’
ہوئی جس کی خودی پہلے نمودار
وہی مہدی ، وہی آخر زمانی

——————–

Transliteration

Khule Jate Hain Asrar-e-Nihani
Gya Dour-e-Hadees-e-‘Lan Tarani’

Huwi Jis Ki Khudi Pehle Namoodar
Wohi Mehdi, Wohi Akhir Zamani!

————————–

The veiled secrets are becoming manifest—
Bygone the days of you cannot see Me;

Whosoever finds his self first,
Is Mahdi himself, the Guide of the Last Age.

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے