Home / علامہ اقبال شاعری / با ل جبر یل / با ل جبر یل - رباعيات / ترے سينے ميں دم ہے ، دل نہيں ہے

ترے سينے ميں دم ہے ، دل نہيں ہے

ترے سينے ميں دم ہے ، دل نہيں ہے
ترا دم گرمی محفل نہيں ہے
گزر جا عقل سے آگے کہ يہ نور
چراغ راہ ہے ، منزل نہيں ہے

—————-

Transliteration

Tere Seene Mein Dam Hai, Dil Nahin Hai
Tera Dam Garmi-e-Mehfil Nahin Hai

Thy bosom has breath; it does not have a heart;
Thy breath has not the warmth and fire of life;

Guzar Ja Aqal Se Aagay Ke Ye Nor
Charagh-e-Rah Hai, Manzil Nahin Hai

Renounce the path of reason; it is a light
That brightens thy way; it is not thy Final goal.

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے