Takrar The Mazaraa o Maalik Main Aik Rooz

تکرارتھي مزارع و مالک ميں ايک روز

تکرار تھي مزارع و مالک ميں ايک روز
دونوں يہ کہہ رہے تھے، مرا مال ہے زميں

کہتا تھا وہ، کرے جو زراعت اسي کا کھيت
کہتا تھا يہ کہ عقل ٹھکانے تري نہيں

پوچھا زميں سے ميں نے کہ ہے کس کا مال تو
بولي مجھے تو ہے فقط اس بات کا يقيں

مالک ہے يا مزارع شوريدہ حال ہے
جو زير آسماں ہے ، وہ دھرتي کا مال ہے

 

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے