Home / علامہ اقبال شاعری / دراج کي پرواز ميں ہے شوکت شاہيں
Draaj Ki Parwaaz May Hy Shooket Shaheen

دراج کي پرواز ميں ہے شوکت شاہيں

(Armaghan-e-Hijaz-26)

Durraj Ki Parwaz Mein Hai Shaukat-e-Shaheen

(The partridge flies with the majesty of the falcons)

دراج    کي پرواز ميں ہے شوکت شاہيں
حيرت ميں ہے صياد، يہ شاہيں ہے کہ دراج!
ہر قوم کے افکار ميں پيدا ہے تلاطم
مشرق ميں ہے فردائے قيامت کي نمود آج
فطرت کے تقاضوں سے ہوا حشر پہ مجبور
وہ مردہ کہ تھا بانگ سرافيل کا محتاج

Trasliteration

Durraj Ki Parwaz Mein Hai Shaukat-E-Shaheen
Hairat Mein Hai Sayyadm Ye Shaheen Hai Kh Durraj !

The partridge flies with the majesty of the falcons;
the hunter is nonplussed: is it a partridge or a falcon?

Har Qoum Ke Afkar Mein Paida Hai Talatum
Mashriq Mein Hai Farda’ay Qayamat Ki Namood Aaj

Every nation is astir, her thoughts in a constant flux;
today we see in the East the signs of tomorrow’s resurrection.

Fitrat Ke Taqazon Se Huwa Hashar Pe Majboor
Woh Murda Kh Tha Bang-E-Sarafeel Ka Mohtaj

The deadbody, awaiting Israfil’s Call, has all of a sudden risen to life:
Nature’s pitiless laws work wonders.

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے