Home / علامہ اقبال شاعری / جو عالم ايجاد ميں ہے صاحب ايجاد
Jo Aalim e Ijaad May Hay Sahib e Ijaad

جو عالم ايجاد ميں ہے صاحب ايجاد

جو عالم ايجاد ميں ہے صاحب ايجاد
ہر دور ميں کرتا ہے طواف اس کا زمانہ
تقليد سے ناکارہ نہ کر اپني خودي کو
کر اس کي حفاظت کہ يہ گوہر ہے يگانہ
اس قوم کو تجديد کا پيغام مبارک
ہے جس کے تصور ميں فقط بزم شبانہ

ليکن مجھے ڈر ہے کہ يہ آوازہ تجديد
مشرق ميں ہے تقليد فرنگي کا بہانہ

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے