Home / علامہ اقبال شاعری / با ل جبر یل / بال جبریل (حصہ دوم) / يوں ہاتھ نہيں آتا وہ گوہر يک دانہ

يوں ہاتھ نہيں آتا وہ گوہر يک دانہ


يوں ہاتھ نہيں آتا وہ گوہر يک دانہ
يک رنگی و آزادی اے ہمت مردانہ
يا سنجر و طغرل کا آئين جہاں گيری
يا مرد قلندر کے انداز ملوکانہ
يا حيرت فارابی يا تاب و تب رومی
يا فکر حکيمانہ يا جذب کليمانہ
يا عقل کی روباہی يا عشق يد اللہی
يا حيلہ افرنگی يا حملہ ترکانہ
يا شرع مسلمانی يا دير کی دربانی
يا نعرہ مستانہ ، کعبہ ہو کہ بت خانہ
ميری ميں فقيری ميں ، شاہی ميں غلامی ميں
کچھ کام نہيں بنتا بے جرأت رندانہ

————————-

Translation

Yun Hath Nahin Ata Woh Gohar-e-Yak Dana
Yak Rangi-o-Azadi Ae Himmat-e-Mardana!

Ya Sanjar-o-Tughral Ka Aaeen-e-Jahangeeri
Ya Mard-e-Qalandar Ke Andaz-e-Mulookana!

Ya Hairat-e-Farabi Ya Taab-o-Tab-e-Rumi
Ya Fikr-e-Hakeemana Ya Jazb-e-Kaleemana!

Ya Aqal Ki Roobahi Ya Ishq-e-Yadullahi
Ya Heela-e-Afrangi Ya Hamla-e-Tarkana!

Ya Shara-e-Musalmani Ya Dair Ki Darbani
Ya Naara-e-Mastana , Kaaba Ho Ke Butkhana!

Meeri Mein Faqeeri Mein, Shahi Mein Ghulami Mein
Kuch Kaam Nahin Banta Be-Jurrat-e-Rindana

————————————–

About محمد نظام الدین عثمان

Check Also

فقر کے ہيں معجزات تاج و سرير و سپاہ

فقر کے ہيں معجزات تاج و سرير و سپاہ فقر ہے ميروں کا مير ، …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے