يہ سرود قمري و بلبل فريب گوش ہے

يہ سرود قمري و بلبل فريب گوش ہے
باطن ہنگامہ آباد چمن خاموش ہے
تيرے پيمانوں کا ہے يہ اے مےء مغرب اثر
خندہ زن ساقي ہے، ساري انجمن بے ہوش ہے
دہر کے غم خانے ميں تيرا پتا ملتا نہيں
جرم تھا کيا آفرينش بھي کہ تو روپوش ہے
آہ! دنيا دل سمجھتي ہے جسے، وہ دل نہيں
پہلوئے انساں ميں اک ہنگامہء خاموش ہے
زندگي کي رہ ميں چل، ليکن ذرا بچ بچ کے چل
يہ سمجھ لے کوئي مينا خانہ بار دوش ہے
جس کے دم سے دلي و لاہور ہم پہلو ہوئے
آہ، اے اقبال وہ بلبل بھي اب خاموش ہے

About محمد نظام الدین عثمان

Check Also

Is Byhas Ka Kuch Faisla Main Naheen Kar Sakta

آزادی نسواں

اس بحث کا کچھ فيصلہ ميں کر نہيں سکتا گو خوب سمجھتا ہوں کہ يہ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے