Umeed Kia Hay Siyasat Kay Peeshwaun Say

سياسي پيشوا

اميد کيا ہے سياست کے پيشواؤں سے
يہ خاک باز ہيں ، رکھتے ہيں خاک سے پيوند

ہميشہ مور و مگس پر نگاہ ہے ان کي
جہاں ميں صفت عنکبوت ان کي کمند

خوشا وہ قافلہ ، جس کے امير کي ہے متاع
تخيل ملکوتي و جذبہ ہائے بلند

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے