Nahe Maqam Ki Kho Gar Tabiat e Aazad

ابتدا

ضربِ کلیم

یعنی
اعلانِ جنگ، دَورِ حاضر کے خلاف
اقبالؔ

نہیں مقام کی خُوگر طبیعتِ آزاد
ہُوائے سیر مثالِ نسیم پیدا کر
ہزار چشمہ ترے سنگِ راہ سے پھُوٹے
خودی میں ڈُوب کے ضربِ کلیم پیدا کر

 

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے