Iskandar-o-Changaiz Ke Hathon Se Jahan Mein

قوت اور دين

اسکندر و چنگيز کے ہاتھوں سے جہاں ميں
سو بار ہوئی حضرت انساں کی قبا چاک
تاريخ امم کا يہ پيام ازلی ہے
‘صاحب نظراں! نشہ قوت ہے خطرناک،
اس سيل سبک سير و زميں گير کے آگے
عقل و نظر و علم و ہنر ہيں خس و خاشاک

لا ديں ہو تو ہے زہر ہلاہل سے بھی بڑھ کر
ہو ديں کی حفاظت ميں تو ہر زہر کا ترياک

——————

Transliternation

Quwwat aur Deen 

Iskandar-o-Changaiz Ke Hathon Se Jahan Mein
Sou Bar Huwi Hazrat-e-Insan Ki Qaba Chaak
 
Tareekh-e-Ummam Ka Ye Payam -e-Azali Hai
‘Sahib Nazaran ! Nasha-e-Quwwat Hai Khatarnaak’
 
Iss Seel-E-Subaq Sair-o-Zameengeer Ke Agay
Aqal-o-Nazar-o-Ilm-o-Hunar Hain Khs-o-Khashak
 
La-Deen Ho To Hai Zahr-E-Halahil Se Bhi Barh Kar
Ho Deen Ki Hifazat Mein To Har Zehr Ka Tiryaak

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے