Her Lehza Hy Momin Ki Nai Shaan Nai Aan

مرد مسلمان

ہرلحظہ ہے مومن کی نئی شان، نئی آن
گفتار ميں، کردار ميں، اللہ کی برہان

قہاری و غفاری و قدوسی و جبروت
يہ چار عناصر ہوں تو بنتا ہے مسلمان

ہمسايہء جبريل اميں بندۂ خاکی
ہے اس کا نشيمن نہ بخارا نہ بدخشان

يہ راز کسی کو نہيں معلوم کہ مومن
قاری نظر آتا ہے ، حقيقت ميں ہے قرآن

قدرت کے مقاصد کا عيار اس کے ارادے
دنيا ميں بھی ميزان، قيامت ميں بھی ميزان

جس سے جگر لالہ ميں ٹھنڈک ہو، وہ شبنم
درياؤں کے دل جس سے دہل جائيں، وہ طوفان

فطرت کا سرود ازلی اس کے شب و روز
آہنگ ميں يکتا صفت سورۂ  رحمن

بنتے ہيں مری کارگہ فکر ميں انجم
لے اپنے مقدر کے ستارے کو تو پہچان

 

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے