ابتدا

ابتدا Archives – Urdu Poetry Library

آواز غيب

Ati Hai Dam-E-Subah Sadda Arsh-E-Bareen Se

(Armaghan-e-Hijaz-08) Awaz-e-Ghaib (آواز غیب) A Voice From Beyond آتي ہے دم صبح صدا عرش بريں سے کھويا گيا کس طرح ترا جوہر ادراک! کس طرح ہوا کند ترا نشتر تحقيق ہوتے نہيں کيوں تجھ سے ستاروں کے جگر چاک تو ظاہر و باطن کي خلافت کا سزاوار کيا شعلہ بھي ہوتا …

Read More »

مسعود مرحوم

(Armaghan-e-Hijaz-07) Masood Marhoom (مسعود مرحوم) The Late Masud يہ مہر و مہ، يہ ستارے يہ آسمان کبود کسے خبر کہ يہ عالم عدم ہے يا کہ وجود خيال جادہ و منزل فسانہ و افسوں کہ زندگي ہے سراپا رحيل بے مقصود رہي نہ آہ ، زمانے کے ہاتھ سے باقي …

Read More »

دوزخي کی مناجات

Iss Dair-e-Kuhan Mein Hain Gharzmand Poojari

(Armaghan-e-Hijaz-06) Dozakhi Ki Munajat (دوزخی کی مناجات) Litany Of The Damned اس دير کہن ميں ہيں غرض مند پجاري رنجيدہ بتوں سے ہوں تو کرتے ہيں خدا ياد پوجا بھي ہے بے سود، نمازيں بھي ہيں بے سود قسمت ہے غريبوں کي وہي نالہ و فرياد ہيں گرچہ بلندي ميں …

Read More »

معزول شہنشاہ

Ho Mubarik Uss Shahenshah-e-Nikofar Jaam Ko

(Armaghan-e-Hijaz-05) Maazool Shahenshah (معزول شہنشاہ) (A Deposed Monarch)   Mazool Shahenshah A DEPOSED MONARCH Ho Mubarik Uss Shahenshah-e-Nikofar Jaam Ko Jis Ki Qurbani Se Asrar-e-Mulookiyat Hain Faash Good luck to that King, cashiered so gracefully, whose Dismissal shows how a ruling Power behaves! ‘Shah’ Hai Bartanvi Mandar Mein Ek Mitti Ka But Jis Ko Kar Sakte Hain, Jab Chahain Poojari Paash Paash In Britain’s fane the King is only a plaster Image its worshippers smash whenever they choose; Hai …

Read More »

عالم برزخ

Kya Shay Hai, Kis Amroz Ka Farda Hai Qayamat

(Armaghan-e-Hijaz-04) Alam-e-Barzakh (عالم برزخ) The State of Barzakh ( Read Explanation here – نظم کی تشریح یہاں پڑھیں) مردہ اپني قبر سے کيا شے ہے، کس امروز کا فردا ہے قيامت اے ميرے شبستاں کہن! کيا ہے قيامت؟ قبر اے مردئہ صد سالہ! تجھے کيا نہيں معلوم؟ ہر موت کا پوشيدہ تقاضا …

Read More »

تصوير و مصور

Kaha Tasveer Ne Tasweer Gar Se

(Armaghan-e-Hijaz-03) Tasveer-o-Musawir (تصویر و مصور) Painting and Painter تصوير کہا تصوير نے تصوير گر سے نمائش ہے مري تيرے ہنر سے وليکن کس قدر نا منصفي ہے کہ تو پوشيدہ ہو ميري نظر سے! مصور گراں ہے چشم بينا ديدہ ور پر جہاں بيني سے کيا گزري شرر پر! نظر …

Read More »