نصيحت

بچۂ شاہيں سے کہتا تھا عقاب سالخورد
اے تيرے شہپر پہ آساں رفعت چرخ بريں
ہے شباب اپنے لہو کی آگ ميں جلنے کا نام
سخت کوشی سے ہے تلخ زندگانی انگبيں

جو کبوتر پر جھپٹنے ميں مزا ہے اے پسر
وہ مزا شايد کبوتر کے لہو ميں بھی نہيں

———————-

Transliteration

Nasihat

Bacha-e-Shaheen Se Kehta Tha Auqab-e-Saal Khurd (Purana, Tajarba kaar)
Ae Tere Shehpar Pe asan Riffat-e-Charkh-e-Bareen

Hai Shabab Apne Lahoo Ki Aag Mein Jalne Ka Naam
Sakht Koshi Se Hai Talakh-e-Zindagaani Angbeen

Jo Kabootar Par Jhapatne Mein Maza Hai Ae Pisar!
Woh Maza Shaid Kabootar Ke Lahoo Mein Bhi Nahin

————————–

COUNSEL

An eagle full of years to a young hawk said—
Easy your royal wings through high heaven spread:

To burn in the fire of our own veins is youth!
Strive, and in strife make honey of life’s gall;

Maybe the blood of the pigeon you destroy,
My son, is not what makes your swooping joy!

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے