Home / علامہ اقبال شاعری / ضرب کلیم / اسلام اور مسلمان / آزادی شمشير کے اعلان پر
Socha Bhi Hay Ay Mard E Musliman Kbhi To Ny

آزادی شمشير کے اعلان پر

سوچا بھی ہے اے مرد مسلماں کبھی تو نے
کيا چيز ہے فولاد کی شمشير جگردار

اس بيت کا يہ مصرع اول ہے کہ جس ميں
پوشيدہ چلے آتے ہيں توحيد کے اسرار

ہے فکر مجھے مصرع ثانی کی زيادہ
اللہ کرے تجھ کو عطا فقر کی تلوار

قبضے ميں يہ تلوار بھی آجائے تو مومن
يا خالد جانباز ہے يا حيدر کرار

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے