Home / علامہ اقبال شاعری / با ل جبر یل / بال جبریل (حصہ اول) / وہی ميری کم نصيبی ، وہی تيری بے نيازی

وہی ميری کم نصيبی ، وہی تيری بے نيازی


وہی ميری کم نصيبی ، وہی تيری بے نيازی
ميرے کام کچھ نہ آيا يہ کمال نے نوازی
ميں کہاں ہوں تو کہاں ہے ، يہ مکاں کہ لامکاں ہے؟
يہ جہاں مرا جہاں ہے کہ تری کرشمہ سازی
اسی کشمکش ميں گزريں مری زندگی کی راتيں
کبھی سوزو ساز رومی ، کبھی پيچ و تاب رازی
وہ فريب خوردہ شاہيں کہ پلا ہو کرگسوں ميں
اسے کيا خبر کہ کيا ہے رہ و رسم شاہبازی
نہ زباں کوئی غزل کی ، نہ زباں سے باخبر ميں
کوئی دلکشا صدا ہو ، عجمی ہو يا کہ تازی
نہيں فقر و سلطنت ميں کوئی امتياز ايسا
يہ سپہ کی تيغ بازی ، وہ نگہ کی تيغ بازی
کوئی کارواں سے ٹوٹا ، کوئی بدگماں حرم سے
کہ امير کارواں ميں نہيں خوئے دل نوازی

———————————–

Translation

Wohi Meri Kam Naseebi, Wohi Teri Be Niazi
Mere Kaam Kuch Na Aya Ye Kamal-e-Ne Nawazi

Mein Kahan Hun Tu Kahan Hai, Ye Makan Ke La-Makan Hai?
Ye Jahan Mera Jahan Hai Teri Karishma Sazi

Issi Kashmakash Mein Guzreen Meri Zindagi Ki Raatain
Kabhi Souz-o-Saaz-e-Rumi, Kabhi Paich-o-Taab-e-Razi

Woh Faraib Khurdah Shaheen K Pala Ho Kargason Mein
Ussay Kya Khabar Kya Hai Reh-O-Rasm-E-Shahbazi

Na Zuban Koi Ghazal Ki, Na Zuban Se Ba-Khabar Main
Koi Dil Kusha Sada Ho, Ajami Ho Ya Ke Tazi

Nahin Faqar-O-Saltanat Mein Koi Imtiaz Aesa
Ye Sipah Ki Taeg Bazi, Woh Nigah Ki Taeg Bazi

Koi Karwan Se Toota, Koi Bad-Ghuman Haram Se
Ke Ameer-E-Karwan Mein Nahin Khuay Dil Nawazi
———————-

About محمد نظام الدین عثمان

Check Also

Is Byhas Ka Kuch Faisla Main Naheen Kar Sakta

آزادی نسواں

اس بحث کا کچھ فيصلہ ميں کر نہيں سکتا گو خوب سمجھتا ہوں کہ يہ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے