با ل جبر یل - رباعيات

خودی کی خلوتوں ميں گم رہا ميں

خودی کی خلوتوں ميں گم رہا ميں

خدا کے سامنے گويا نہ تھا ميں
نہ ديکھا آنکھ اٹھا کر جلوہ دوست
قيامت ميں تماشا بن گيا ميں

———————-

Transliteration

Khudi Ki Khalwaton Mein Gum Raha Main
Khuda Ke Samne Goya Na Tha Main

I was in the solitude of Selfhood lost,
And was, it seemed, unaware of the Presence;

Na Dekha Ankh Utha Kar Jalwa-e-Dost
Qayamat Mein Tamasha Ban Gya Main!

I lifted not my eyes to see my Friend,
And, on the Day of Judgment, shamed myself.

————————–

Tags

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button