Wajud e Zan Se Hy Tasveer Kainat Mein Rang

عورت

وجود زن سے ہے تصوير کائنات ميں رنگ
اسي کے ساز سے ہے زندگي کا سوز دروں

شرف ميں بڑھ کے ثريا سے مشت خاک اس کي
کہ ہر شرف ہے اسي درج کا در مکنوں

مکالمات فلاطوں نہ لکھ سکي ، ليکن
اسي کے شعلے سے ٹوٹا شرار افلاطوں

——————————

Wujood-e-Zan Se Hai Tasveer-e-Kainat Mein Rang
Issi Ke Saaz Se Hai Zindagi Ka Souz-e-Darun

The picture that this world presents from woman gets its tints and scents: 
She is the lyre that can impart pathos and warmth to human heart.

Sharaf Mein Barh Ke Sureya Se Musht-e-Khak Iss Ki
Ke Har Sharaf Hai Issi Durj Ka Dur-e-Makoon

Her handful clay is superior far to Pleiades that so higher are 
For every man with knowledge vast, Like gem out of her cask is cast.

Makalat-e-Falatoon Na Likh Saki, Lekin
Issi Ke Shole Se Toota Sharaar-e-Aflatoon

Like Plato can not hold discourse, Nor can with thunderous voice declaim: 
But Plato was a spark that broke from her fire that blazed like flame.

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے