Home / علامہ اقبال شاعری / نگاہ وہ نہيں جو سرخ و زرد پہچانے

نگاہ وہ نہيں جو سرخ و زرد پہچانے

نگاہ وہ نہيں جو سرخ و زرد پہچانے
نگاہ وہ ہے کہ محتاج مہر و ماہ نہيں
فرنگ سے بہت آگے ہے منزل مومن
قدم اٹھا! يہ مقام انتہائے راہ نہيں
کھلے ہيں سب کے ليے غربيوں کے ميخانے
علوم تازہ کي سرمستياں گناہ نہيں
اسي سرور ميں پوشيدہ موت بھي ہے تري
ترے بدن ميں اگر سوز ‘لاالہ’ نہيں

سنيں گے ميري صداخانزاد گان کبير؟
گليم پوش ہوں ميں صاحب کلاہ نہيں

About محمد نظام الدین عثمان

Check Also

Is Byhas Ka Kuch Faisla Main Naheen Kar Sakta

آزادی نسواں

اس بحث کا کچھ فيصلہ ميں کر نہيں سکتا گو خوب سمجھتا ہوں کہ يہ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے