Home / علامہ اقبال شاعری / ارمغان حجاز / ملا زادہ ضیغم لولابی کشمیری کا بیاض

ملا زادہ ضیغم لولابی کشمیری کا بیاض

ملا زادہ ضیغم لولابی کشمیری کا بیاض Archives – Urdu Poetry Library

غريب شہر ہوں ميں، سن تو لے مري فرياد

Gareeb Shaher Hun Main, Sun To Lay Mere Fryaad

(Armaghan-e-Hijaz-41) Sir Akbar Haideri, Sadar-e-Azam Haiderabad Dakkan Ke Naam (سر اکبر حیدری، صدر اعظم حیدرآباد دکن کے نام) To Sir Akbar Hyderi The Chief Minister Of Hyderabad Deccan (Armaghan-e-Hijaz-40) Ghareeb-e-Shehar Hun Mein, Sun To Le Meri Faryad (غریب شہر ہوں میں، سن تو لے میری فریاد) I am quiet a …

Read More »

آں عزم بلند آور آں سوز جگر آور

Aan Azm Buland Aawer Aan Sozay Jigr Aawer

(Armaghan-e-Hijaz-39) Aan Azam-e-Buland Awar Aan Soz-e-Jigar Awar (آن عزم بلند آور آن سوز جگر آور) Nourish that lofty will and burning heart آں عزم بلند آور آں سوز جگر آور شمشير پدر خواہي بازوے پدر آور Translitation Aan Azam-E-Buland Awar Aan Soz-E-Jigar Awar Shamsheer-E-Pidr Khawahi Bazoo’ay Padar Awar Nourish that lofty will and burning heart, get back your father’s arms if thou wish’st to have his sword.

Read More »

خود آگاہي نے سکھلا دي ہے جس کو تن فراموشي

Khudd Aagahii Nay Sikhla Di Hay Jisko Ten e Framooshi

(Armaghan-e-Hijaz-38) Khud Agahi Ne Sikhla Di Hai Jis Ko Tan Faramoshi (خود آگاہی نے سکھلا دی ہے جس کو تن فراموشی) Self‐awareness has made the mujahid forget his body خود آگاہی نے سکھلا دی ہے جس کو تن فراموشی حرام آئی ہے اس مرد مجاہد پر زرہ پوشی Translitation Khud …

Read More »

حاجت نہيں اے خطہ گل شرح و بياں کي

Hajat Nahi Ay Khitta e Gull Sharah o Biyaan Ki

(Armaghan-e-Hijaz-37) Hajat Nahin Ae Khita’ay Gul Sharah-o-Byan Ki (حاجت نہیں اے خطہ گل شرح و بیان کی) O land of charming and sweet flowers what need is there to explain حاجت نہيں اے خطہ گل شرح و بياں کي تصوير ہمارے دل پر خوں کي ہے لالہ تقدير ہے اک …

Read More »

ضمير مغرب ہے تاجرانہ، ضمير مشرق ہے راہبانہ

Zameer Magrib Hy Tajraana Zameer Mashriq Hy Rahibaana

(Armaghan-e-Hijaz-36) Zameer-e-Maghrib Hai Tajirana, Zameer-e-Mashriq Hai Rahbana  (ضمیر مغرب ہے تاجرانہ ، ضمیر مشرق ہے راہبانہ) ضمير مغرب ہے تاجرانہ، ضمير مشرق ہے راہبانہ وہاں دگرگوں ہے لحظہ لحظہ، يہاں بدلتا نہيں زمانہ کنار دريا خضر نے مجھ سے کہا بہ انداز محرمانہ سکندري ہو، قلندري ہو، يہ سب طريقے …

Read More »

چہ کافرانہ قمار حيات مي بازي

Chy Kafrana Qmaar e Hayat Mee Baazi

(Armaghan-e-Hijaz-35) Che Kafarana Qimar-e-Hayat Mee Bazi (چہ کافرانہ قمارحیات می بازی) How heretically do you play the game of life?   چہ کافرانہ قمار حيات مي بازي کہ با زمانہ بسازي بخود نمي سازي دگر بمدرسہ ہائے حرم نمي بينم دل جنيد و نگاہ غزالي و رازي بحکم مفتي اعظم …

Read More »

نشاں يہي ہے زمانے ميں زندہ قوموں کا

Nishaan Yahi Hay Zamany May Zinda Qoumoon Ka

(Armaghan-e-Hijaz-34) Nishan Yehi Hai Zamane Mein Zinda Qaumon Ka (نشان یہی ہے زمانے میں زندہ قوموں کا) It is the sign of living nations نشاں يہي ہے زمانے ميں زندہ قوموں کا کہ صبح و شام بدلتي ہيں ان کي تقديريں کمال صدق و مروت ہے زندگي ان کي معاف …

Read More »

دگرگوں جہاں ان کے زور عمل سے

Degr-goon Jahaan Inky Zoor e Amal Say

(Armaghan-e-Hijaz-33) Digargoon Jahan Un Ke Zor-e-Amal Se (دگرگوں جہاں ان کے زور عمل سے) The living nations of the world have won their laurels دگرگوں جہاں ان کے زور عمل سے بڑے معرکے زندہ قوموں نے مارے منجم کي تقويم فردا ہے باطل گرے آسماں سے پرانے ستارے ضمير جہاں …

Read More »

تمام عارف و عامي خودي سے بيگانہ

Tamaam Aarif wa Aamii Khudi Say Bygaana

(Armaghan-e-Hijaz-32) Tamam Arif-o-Aami Khudi Se Begana (تمام عارف و عامی خودی سے بیگانہ) All high and low are unaware of Khudi   تمام    عارف و عامي خودي سے بيگانہ کوئي بتائے يہ مسجد ہے يا کہ ميخانہ يہ راز ہم سے چھپايا ہے مير واعظ نے کہ خود حرم ہے …

Read More »

آزاد کي رگ سخت ہے مانند رگ سنگ

Aazad Ki Rug Sakht Hay Maninnd Rugg e Sung

(Armaghan-e-Hijaz-31) Azad Ki Rag Sakht Hai Manid Rag-e-Sang (آزاد کی رگ سخت ہے مانند رگ سنگ) A free man’s vein is hard like stone’s آزاد کي رگ سخت ہے مانند رگ سنگ محکوم کي رگ نرم ہے مانند رگ تاک محکوم کا دل مردہ و افسردہ و نوميد آزاد کا …

Read More »

کھلا جب چمن ميں کتب خانہء گل

Khula Jb Chamen May Kuttb Khana e Gull

(Armaghan-e-Hijaz-30) Khula Jab Chaman Mein Kutab Khana’ay Gul (کھلا جب چمن میں کتب خانہ گل) When flowers’ bookshop opened in the garden   کھلا جب چمن ميں کتب خانہء گل نہ کام آيا ملا کو علم کتابي متانت شکن تھي ہوائے بہاراں غزل خواں ہوا پيرک اندرابي کہا لالہ آتشيں …

Read More »

سمجھا لہو کی بوند اگر تو اسے تو خير

Samjha lahu Ki Boond Agr To Isy Tw Khair

(Armaghan-e-Hijaz-29) Samajha Lahoo Ki Boond Agar Tu Isse Tou Khair (سمجھا لہو کی بوند اگر تو اسے تو خیر) Thou think’st it a mere drop of blood; well سمجھا لہو کی بوند اگر تو اسے تو خير دل آدمی کا ہے فقط اک جذبہء بلند گردش مہ و ستارہ کي …

Read More »

نکل کر خانقاہوں سے ادا کر رسم شبيري

Nikal Kr Khanqahoon Say Ada Ker Rassem e Shabbiri

(Armaghan-e-Hijaz-28) Nikal Kar Khanqahon Se Ada Kar Rasm-e-Shabiri (نکل کر خانقاہوں سے ادا کر رسم شبیری) Come out of the monastery and play the role of Shabbir نکل کر خانقاہوں سے ادا کر رسم شبيري کہ فقر خانقاہي ہے فقط اندوہ و دلگيري ترے دين و ادب سے آ رہي …

Read More »

رندوں کو بھي معلوم ہيں صوفی کے کمالات

(Armaghan-e-Hijaz-27) Rindon Ko Bhi Maloom Hain Sufi Ke Kamalat (رندوں کو بھی معلوم ہیں صوفی کے کمالات) The dissolute know the Sufi’s accomplishments رندوں    کو بھي معلوم ہيں صوفي کے کمالات ہر چند کہ مشہور نہيں ان کے کرامات خود گيري و خودداري و گلبانگ ‘انا الحق’ آزاد ہو سالک …

Read More »

دراج کي پرواز ميں ہے شوکت شاہيں

Draaj Ki Parwaaz May Hy Shooket Shaheen

(Armaghan-e-Hijaz-26) Durraj Ki Parwaz Mein Hai Shaukat-e-Shaheen (The partridge flies with the majesty of the falcons) دراج    کي پرواز ميں ہے شوکت شاہيں حيرت ميں ہے صياد، يہ شاہيں ہے کہ دراج! ہر قوم کے افکار ميں پيدا ہے تلاطم مشرق ميں ہے فردائے قيامت کي نمود آج فطرت کے …

Read More »

گرم ہو جاتا ہے جب محکوم قوموں کا لہو

(Armaghan-e-Hijaz-25) Garam Ho Jata Hai Jab Mehkoom Qaumon Ka Lahoo (گرم ہو جاتا ہے جب محکوم قوموں کا لہو) When the enslaved people’s rage boils گرم ہو جاتا ہے جب محکوم قوموں کا لہو تھرتھراتا ہے جہان چار سوے و رنگ و بو پاک ہوتا ہے ظن و تخميں سے …

Read More »

آج وہ کشمير ہے محکوم و مجبور و فقير

Aaj Wo Kashmiir Hay Mehkoom o Majboor o Faqeer

(Armaghan-e-Hijaz-24) Aaj Woh Kashmir Hai Mehkoom-o-Majboor-o-Faqeer (آج وہ کشمیر ہے محکوم و مجبور و فقیر) Today that land of Kashmir, under the heels of the enemy, has become weak, helpless & poor آج    وہ کشمير ہے محکوم و مجبور و فقير کل جسے اہل نظر کہتے تھے ايران صغير سينہء …

Read More »

موت ہے اک سخت تر جس کا غلامي ہے نام

Moot Hay Ik Sakhat Ter Jiska Gulami Hy Name

(Armaghan-e-Hijaz-23) Mout Hai Ek Sakht Ter Jis Ka Ghulami Hai Naam (موت ہے اک سخت تر جس کا غلامی ہے نام) Harder than death is what thou call’st slavery موت    ہے اک سخت تر جس کا غلامي ہے نام مکر و فن خواجگي کاش سمجھتا غلام شرع ملوکانہ ميں جدت …

Read More »

پاني ترے چشموں کا تڑپتا ہوا سيماب

Pani Tery Chasmun Ka Tarpta Hwa Seemaab

(Armaghan-e-Hijaz-22) Mullah Zadeh Zaigham Lolabi Kashmiri Ka Bayaz (ملا زادہ ضیغم لولابی کشمیری کا بیاض) The Poetic Notebook Of Mullazade Zaigham Of Laulab پاني ترے چشموں کا تڑپتا ہوا سيماب مرغان سحر تيري فضاؤں ميں ہيں بيتاب اے وادي لولاب گر صاحب ہنگامہ نہ ہو منبر و محراب ديں بندئہ …

Read More »